نن غٹ اواری اٹ پاکستان نا خذمت ءِ کینہ،

مخالفین آتا پروپیگنڈہ غاتا پرواہ ءِ کننگ آن بیدس شون نا سفر ءِ برجاء تخنہ وزیراعظم محمد نواز شریف نا چترال اٹی لس جلسہ آن تران

نن غٹ اواری اٹ پاکستان نا خذمت ءِ کینہ،
مخالفین آتا پروپیگنڈہ غاتا پرواہ ءِ کننگ آن بیدس شون نا سفر ءِ برجاء تخنہ وزیراعظم محمد نواز شریف نا چترال اٹی لس جلسہ آن تران

چترال (پاکستان نیوز پوائنٹ 07ستمبر 2016ء) وزیراعظم محمد نواز شریف پارینے کہ نن غٹ اواری اٹ پاکستان نا خذمت ءِ کینہ، مخالفین آتا پروپیگنڈہ نا پروہ ءِ کننگ آن بیدس شون نا سفر ءِ برجاء تخنہ، چترال اتون است انا ھب اٹ مابت کیوہ، لواری ٹنل جون 2017ء اسکان پورو مریک، شونداری ڈٹ شونہالی نا مزل ءِ ، علاقہ نا 100 آن زیات خلق آتے بجلی تننگک۔ چارشنبے آ داڑے لس جلسہ آن تران کرسا اوپارے کہ کنے چترال نا الس تون انداخہ مابت ءِ اخس کہ اوفک کنتون کیرہ۔

اوپارے کہ لواری ٹنل آن بیدس 17 ارب روپئی شاہرات آتا جوڑ جاڑ آ ہم خڑچ مریرہ۔ اوپارے کہ ننا است آتیٹی بغض اف ہرادے ہراڑے مینڈیٹ ملا اونا شرف ءِ کینہ،کست مسکہ تو صوبہ غاتیٹی حکومت جوڑ کننگ کرینہ۔ اوپارے کہ برانز سیاست کروک آتے الس ہر جاگہ غا مسترد کرینے۔ وزیراعظم پارے کہ چترال اٹی کیہی یونیورسٹی جوڑ مریک۔ اوپارے کہ علاقہ ٹی ہسپتال آتا جوڑ جاڑ کن وزیراعظم ہیلتھ پروگرام نار داٹ 250 کٹ آتیا تالان ہسپتال اس جوڑ کننگک ہرانا جوڑ جاڑ زوت شروع مریک و گیشتر ڈٹ 2018 ء اسکان پورو مریرہ۔

2018ء آن پد ہم شونداری ڈٹ آتا پوروی ءِ برجاتخنہ۔ اوپارے کہ نن الس نا خذمت آ باور کینہ۔ وزیراعظم پارے کہ ای مست ہم کیہی وار چترال آ بسونٹ، پین وخت اس ہم چترال آ بریوہ۔ اوپارے کہ داجاگہ نا ورناتے کن یونیورسٹی اڈتننگ نا پڑو ءِ کیوہ۔ وزیراعظم پارے کہ چترال نا بندغ آک اسہ وڑاسے ٹی ہم لاہور، کراچی یا ایلو شارتیان کم افس۔ چترال نا الس ءِ سلام پیش کیوہ۔

اوپارے کہ لواری ٹنل ڈٹ انا بنداو ءِ 1955 ء ٹی تخنگا و بھلو وخت اسے آن دا ڈٹ پورو متو۔ اوپارے کہ ننا حکومت ترندی اتون دا ڈٹ آ کاریم کرے و داڑکن فنڈ جاری کرے۔ اوچترال نا ضلع کونسل کن 20 کروڑ روپئی نا گرانٹ نا ہم پڑو ءِ کرے۔ اوپارے کہ نن لواری ٹنل نا پن آ وونٹ خوائتون۔ وزیراعظم پارے کہ شہزادہ افتخار الدین تون تعلق مشرف نا سوب آن آخا بلکن اونا باوہ شہزادہ محی الدین نا سوب آن ءِ۔

اوپارے کہ نن غٹ اواری اٹ داجاگہ نا خلقت نا خذمت ءِ کینہ و جون 2017 ء ٹی لواری ٹنل نا افتتاح ءِ کینہ۔ اوپارے کہ ضلع کونسل ءِ ملوک آ گرانٹ آن علاقہ نا گلی، سینیٹیشن ءِ گچین جوڑ کننگک۔ وزیراعظم پارے کہ ای ہچ ءُ دُنو ہیت اس کپرہ ہرا کنا ایجنڈہ ٹی مفئے۔ اوپارے کہ خوشی ءِ کہ چترال نا الس اردو پہہ مننگ نا بناءِ کرینے۔ وزیراعظم پارے کہ شہزادہ افتخار الدین اسٹ انگا باسک ءِ ہرا مشرف نا پارٹی آن گچین مس ہراتینا نشست آن مستفی مرسا مسلم لیگ (ن) نا ٹکٹ آ الیکشن کرسا گچین مننگ نا خواہش نا درشانی ءِ کرے واہم ای اودے داوڑ کننگ آن منع کریٹ و پاریٹ کہ ہراہراکان ہم گچین مس اودے الس نا خذمت کننگ کن ہلنگے۔

اوپارے کہ مخالفین آتا ہیت آتانوٹس ءِ ہلپنہ، نوٹس ءِ تو الس ہلیک۔ اوپارے کہ چترال نا ورناتے کن اینو اسکان کسس ہم ہچ کتو لواری ٹنل ڈٹ 55 سال آن التواء نا گواچی سلیس۔ اوپارے کہ ای دعاگواُٹ کہ اللہ تعالیٰ مخالفین آتے ہدایت نصیب کے و پاکستان نا شون نا توفیق ایتے۔ اوپارے کہ مسکوہی مسہ سال اٹی چترا ل نا شون اکن 10 ارب روپئی تس۔ بروک آ سال شون اکن پین 8 ارب روپئی ایتنہ۔

اوچترال اٹی شاہراہ تا ڈٹ آتیا زوت کاریم نا بنا کننگ نا پارت کرے۔ اوپارے کہ گولن گول آن چترال اسکان 132 کے وی لین اس شاغنگک ہراڑآن 108 میگاواٹ بجلی ودی مریک۔ وزیراعظم پارے کہ ننا کوشست مریک کہ دا ڈٹ بروک آ سال پورو مرے۔ اوپارے کہ نن گیشتر شونداری ڈٹ آتے 2018 ء آن مست پورو کینہ۔ داکان گڈ وزیراعظم نا سلاہکار انجینئر امیر مقام جلسہ آن تران کرسا پارے کہ الس پی ٹی آئی ءِ مسترد کرینے۔

عمران خان 2018ء نا گچین کاری تے کٹنگ کپک۔ جلسہ ٹی مسکوہی گورنر کے پی کے سردار مہتاب خان عباسی، وزیر مملکت برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی انوشہ رحمان، باسک قومی اسمبلی شہزادہ افتخار الدین ، باسک قومی اسمبلی صاحبزادہ طارق اللہ، مسلم لیگ (ن) ضلع چکوال نا صدر سعید احمد خان و ایلو کسرشون آک ہم ساڑی ئسر۔